یہ مزار یہ میلے
نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ اللہ یہود و نصاریٰ پر لعنت فرمائے کہ انہوں نے اپنے انبیاء اور صالحین کی قبروں کو سجدہ گاہ بنالیا۔ اورفتح مکہ کے بعد علی رضی اللہ عنہ کو حکم صادر فرمایا کہ جاؤ جو قبر بھی زمین سے اونچی نظر آئے اُسے زمین کے برابر کردو۔ لیکن آج وہ امت مسلمہ جس کا یہ نعرہ ہے کہ حرمت رسول پر جان بھی قربان ہے، اس کی کوئی بستی بھی ایسی نہ ملے گی جہاں قبروں کو مزار بنا کر پرستش نہ کی جا رہی ہو۔ تو کیا اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے حکم کا انکار ان کی گستاخی نہیں ہے؟